حکومتی اراکین وزارتوں، مراعات اور ٹھیکوں پر لڑ رہے ہیں، ہدایت الرحمن بلوچ

0 114

جعفرآباد(امروز ویب ڈیسک)جماعت اسلامی بلوچستان کے صوبائی جنرل سیکرٹری مولانا ہدایت الرحمن بلوچ نے کہا ہے کہ بلوچستان میں ڈیتھ اسکواڈ، منشیات فروشوں، چوروں اور لٹیروں کی عدم سرپرستی تک امن کا قیام شرمندہ تعبیر نہیں ہوسکتا جماعت اسلامی سرداری اور جاگیرداری نظام سے عوام کو نجات دلا کر رہے گی بلوچستان میں باپ حکومت میں طلبہ، ڈاکٹرز،

اساتذہ، کسان، مزدور، ماہی گیر سراپا احتجاج ہیں حکومتی اراکین وزارتوں، مراعات اور ٹھیکوں پر لڑ رہے ہیں عوام اور عوامی مسائل پر کسی قسم کی توجہ نہیں دی جا رہی ڈیرہ اللہ یار میں صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری عبدالمجید بادینی اور ضلعی امیر جعفرآباد محمد امین بگٹی کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے مولانا ہدایت الرحمن بلوچ نے کہا کہ صوبے میں سکون صرف دو مقامات پر ہے ایک مقام وزیراعلی ہاوس دوسرا گورنر ہاوس ہے باقی صوبے بھر میں شور شرابہ آہ و پکار ہے

لاپتہ افراد کے لواحقین اپنے پیاروں کو منظر عام پر لانے کے لیے تڑپ اور بلک رہے ہیں انکا کہنا تھا کہ جماعت اسلامی بلوچستان میں حالیہ حلقہ بندیوں کو یکسر مسترد کرتی ہے حلقہ بندیوں میں بد دیانتی کرتے ہوئے ہیرا پھیری کرکے ایک علاقے کو دوسرے علاقے میں شامل کیا گیا ہم شکر کرتے ہیں کہ جعفرآباد کو سندھ، گوادر کو ایران اور قلعہ عبداللہ کو افغانستان میں شامل نہیں کیا گیا حلقہ بندیاں کرنے والے شائد صوبے کی جغرافیہ سے ناواقف ہیں عوام کے ووٹ پر ڈاکہ کسی صورت قبول نہیں کرینگے

گوادر حق دو تحریک کے ثمرات سامنے آنا شروع ہو گئے ہیں چیک پوسٹیں کافی حد تک ہٹا دی گئی ہیں ٹرالر مافیہ کو گوادر پورٹ سے بیدخل کر دیا گیا بارڈر سول انتظامیہ کے حوالے کردی گئی مزید مطالبات بھی جلد منظور ہونگے ماہی گیروں کے مطالبات کی منظوری میں چیف سیکرٹری بلوچستان اور محکمہ فشریز کے حکام کا خصوصی تعاون رہا مولانا ہدایت الرحمن نے امیر جماعت اسلامی سراج الحق کے دورہ جعفرآباد کا شیڈول جاری کرتے ہوئے بتایا کہ امیر جماعت اسلامی سراج الحق 2 مارچ کو جعفرآباد پہنچے گی وہ 3 مارچ تک جعفرآباد میں غریب افراد میں تقسیم مفت پلاٹ اور دو شمولیتی تقاریب میں شریک ہونے کے ساتھ 3 مارچ کو اعلانیہ 101 دھرنوں کے سلسلے میں جعفرآباد کے ہیڈ کوارٹر شہر ڈیرہ اللہ یار میں احتجاجی دھرنا ہوگا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.