ایران نے ریلوے لائن کے بعد گیس فیلڈ منصوبے سے بھی بھارت کو فارغ کر دیا

0 105

تہران” ایران نے ریلوے لائن کے بعد گیس فیلڈ منصوبے سے بھی بھارت کو فارغ کر دیا، گیس منصوبہ مقامی کمپنی یا کسی اور ملک کے سپرد کیا جاسکتا ہے، بھارت کو سائیڈ لائن کرنے کے بعد بیجنگ اور تہران کے درمیان600 ارب ڈالر کے منصوبوں پر بات چیت جاری ہے۔ روسی میڈیا کے مطابق ایران نے بھارت کو گیس فیلڈ منصوبے سے بھی فارغ کردیا ہے۔
چند روز قبل ایران نے بھارت کو چاہ بہار ریل پراجیکٹ سے الگ کیا تھا۔ ایرانی حکومت نے اپنے طور پر ریل لائن کی تعمیر کا فیصلہ کیا ہے، بھارت اور ایران کے درمیان 4 سال قبل یہ معاہدہ طے پایا تھا جس کے تحت افغانستان کی سرحد کیساتھ چاہ بہار سے زاہدان تک ریلوے لائن کی تعمیر ہونی ہے لیکن ایران نے پراجیکٹ شروع کرنے اور فنڈنگ میں تاخیر کرنے پر بھارت کو اس پراجیکٹ سے الگ کر دیا ہے۔

ایرانی حکام نے بھارتی میڈیا کو بتایا کہ پورا پراجیکٹ مارچ 2022 تک مکمل ہوگا اور ایران اس ریلوے لائن کو بھارت کے بغیر مکمل کرے گا۔ لیکن اب ایران نے بھارت کو گیس منصوبے سے بھی الگ کردیا ہے۔ فرزاد بی گیس فیلڈ کے لیے پہلے بھارتی کمپنی او این جی سی سے بات چیت ہورہی تھی۔ لیکن اب یہ منصوبہ مقامی یا کسی اور ملک کے سپرد کیا جاسکتا ہے۔ یہ کہا جا رہا ہے کہ فرزاد گیس فیلڈ کا منصوبہ ممکنہ طور پر چین کو مل سکتا ہے

Leave A Reply

Your email address will not be published.