ٹرانس جینڈر ایکٹ کیس؛ کمیونٹی کو تحفظ اور حق دینا ہی اصل مقصد ہے، وفاقی شرعی عدالت کے ریمارکس

0 117

وفاقی شرعی عدالت نے ٹرانس جینڈر ایکٹ سے متعلق کیس میں تمام فریقین سے تحریری گزارشات طلب کرلیں۔

وفاقی شرعی عدالت کے قائم مقام چیف جسٹس سید محمد انور کی سربراہی میں بینچ نے ٹرانس جینڈر ایکٹ کیخلاف کیس کی سماعت کی تو متعدد خواجہ سرا بھی کمرہ عدالت میں موجود تھے۔

خواجہ سراؤں نے عدالت سے صنفی ماہرین سے معاونت لینے کا مطالبہ کیا اور بتایا کہ یہ کیس شروع ہونے سے ان کیلئے خطرات بڑھ گئے ہیں، پشاور میں تین خواجہ سراوں کو اسی وجہ سے قتل کیا گیا،عدالت کیس کا فیصلہ ہونے تک خواجہ سراؤں کے خلاف کارروائی اور کیس کی سوشل میڈیا پر تشہیر پر پابندی لگائے۔

قائم مقام چیف جسٹس شرعی عدالت نے ریمارکس دیئے کہ اصل مسئلہ حقوق کا ہے۔ حقوق ملنے چاہئیں، کمیونٹی کو تحفظ اور حق دینا ہی اصل مقصد ہے۔ آنکھیں بند کر لینے سے کوئی نابینا نہیں بن جائے گا۔

پیپلز پارٹی کے رہنما فرحت اللہ بابر نے کہا کہ دو بلز کو ملا کر ایک قانون بنایا گیا تھا۔ سارے عمل سے عدالت کو آگاہ کرنا چاہتے ہیں۔

جماعت اسلامی کے سینیٹر مشتاق کے وکیل نے بتایا کہ سینیٹ میں نیا بل پیش کیا گیا۔ کیس کی سماعت غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کردی گئی۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.