عمران خان نے پی ٹی آئی کے اراکین اسمبلی کو استعفوں کی تصدیق کرانے سے روک دیا

0 163

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان نے اپنی پارٹی کے اراکین قومی اسمبلی کو استعفوں کی تصدیق کے لیے قومی اسمبلی کے اسپیکر راجا پرویز اشرف کے سامنے پیش ہونے سے روک دیا ہے۔

سابق وزیراعظم نے ڈیجیٹل میڈیا سے تعلق رکھنے والے افراد سے بات کرتے ہوئے کہا ہم پہلے ہی استعفیٰ دے چکے ہیں اور قومی اسمبلی کے فلور پر (اس سلسلے میں) ایک اعلان بھی کیا گیا تھا، لہٰذا استعفوں کی تصدیق کے لیے وہاں جانے کی ضرورت نہیں ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اسمبلی میں واپسی سے یہ تاثر ملے گا کہ پی ٹی آئی نے ‘امپورٹڈ حکومت’ کو قبول کر لیا ہے، ساتھ ہی اس بات پر زور دیا کہ کسی بھی رکن کو انفرادی طور پر اسمبلی میں نہیں جانا چاہیے۔

قبل ازیں اسپیکر قومی اسمبلی نے 6 جون سے پی ٹی آئی اور عوامی مسلم لیگ (اے ایم ایل) کے 131 اراکین کے استعفوں کی تصدیق شروع کرنے کا فیصلہ کیا تھا تاکہ اس بات کی تصدیق کی جا سکے کہ آیا یہ سب ‘رضاکارانہ’ اور ‘حقیقی’ ہیں۔

قومی اسمبلی کے اسپیکر نے اس سے قبل پی ٹی آئی اور عوامی مسلم لیگ (اے ایم ایل) کے 131 اراکین کے استعفوں کی تصدیق 6 جون سے شروع کرنے کا فیصلہ کیا تھا تاکہ اس بات کی تصدیق کی جا سکے کہ آیا یہ سب ‘رضاکارانہ’ اور ‘حقیقی’ ہیں۔

اسمبلی سیکریٹریٹ کے ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی کے لیٹر ہیڈ پر چھپنے والے زیادہ تر استعفوں کا متن ایک ہی تھا جب کہ بعض ارکان کے دستخط اسمبلی کے رول پر موجود استعفوں سے میل نہیں کھاتے۔

عمران خان نے ڈیجیٹل میڈیا انفلوئنسرز کو بتایا کہ پی ٹی آئی 20 جولائی کو پنجاب کے ان حلقوں میں ہونے والے ضمنی انتخابات میں بھرپور حصہ لے گی جو ای سی پی کی جانب سے منحرف اراکین کو ڈی سیٹ کرنے کے بعد خالی ہوئے تھے۔

عمران خان نے پی ٹی آئی کے اراکین اسمبلی کو استعفوں کی تصدیق کرانے سے روک دیا">
Leave A Reply

Your email address will not be published.